جملہ بازی اور علم و استدلال کا فرق

جملہ بازی ادب اور شاعری کا میدان ہے، علم کے میدان میں اس کی کوئی اہمیت نہیں، سوائے یہ کہ یہ حسن بیان کا سبب ہے تاہم علم اور استدلال کے ابلاغ میں یہ نقصان دہ بھی ہے، وہ اس طرح کہ الفاظ کی خوبصورتی بعض اوقات دلیل کی کمزوری کو قوت کا ملمع فراہم کرنے کےجرم کا ارتکاب کرتی ہے اور بعض اوقات ایک بے بنیاد بات علمی ہونےکا تاثر قائم کردیتی ہے۔ کم تعلیم یافتہ اور برے تعلیم یافتہ افراد طبقات اور سماجوں میں یہ المیہ اکثر برپا ہوا اور ہوتا رہتا ہے۔
ہمارے ہاں کئی بڑے نام محض جملہ بازی کی وجہ سے بڑے ہیں، ورنہ علم و استدلال کے میدان میں ان کا کوئی کارنامہ اور کوئی کنٹریبیوشن نہیں ہے۔
ایسا ہی حال مشکل پسندوں کا ہے۔ کسی غیر اہم بات کو مشکل الفاظ کا قالب پہناتے ہیں تو بات بلا وجہ ہی فلسفیانہ وزن کی حامل نظر آنے لگتی ہے۔ ایسی مشکل پسندی کی تسہیل کرنے کے بعد معلوم ہوتا ہے کہ بھوسے میں دانے نہیں تھے۔
سائنس کے علاوہ کوئی سماجی اور فلسفیانہ علم ایسا نہیں جو پہلے سے موجود تصورات اور معلومات سے ہٹ کر کوئی بات کر سکے۔ سماجی علوم اور فلسفے میں فقط زوایہ نگاہ اور ترتیب مقدمات نئی ہوتی ہے، لیکن بنیادی تصورات اور معلومات نئے نہیں ہوتے۔ اس لیے کسی نئی زبان کے ایجاد کرنے کی ضرورت نہیں۔ نئی اصطلاحات کی ضرورت الگ چیز ہے۔ اس کے لیے بھی معلوم الفاظ ہی کو مزید کچھ نئے مفاہیم پہنا دیے جاتے ہیں۔
مشکل پسندی کی ایک وجہ انفرادیت پسندی بھی ہوتی ہے۔ کہنے کو کچھ نیا نہ ہوتو زبان و اسلوب کے نیا پن سے انفرادیت قائم کرنے کی خُو قاری کو بلا وجہ کی اذیت میں مبتلا کرنے کا سبب بنتی ہے۔
ایک زبان اپنے معیاری ذخیرہ الفاظ کے ساتھ ہر فکر و خیال کو بغیر غیر مانوس الفاظ و تراکیب اور اسالیب کے منتقل کر سکتی ہے۔ اس کے لیے عذر لنگ وہی تراشتے ہیں جو زبان سیکھنے کی زحمت نہیں کرتے یا زبان سے ابلاغ مدعا کی بجائے انفرادیت کی چھاپ یا علمیت کا رعب قائم کرنا چاہتے ہیں۔
تصور کی پیچیدگی زبان کی پیچیدگی کو لازم نہیں۔
مشکل زبان وہی لکھتا ہے جس پر زبان مشکل ہوتی ہے۔
سادگی فن کی انتہا ہوتی ہے۔ ( بروس لی)

اس تحریر كو شیئر كریں
Share on facebook
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp
Share on email
Dr Irfan Shehzad

Dr Irfan Shehzad

Dr Irfan Shehzad belongs to Rawalpindi, Pakistan. He holds a doctorate in Islamic Studies from National University of Modern Languages (NUML) Islamabad, Pakistan. He is working as a companion to Ghamidi Center of Islamic Learning Dallas, USA. He is an assistant research fellow with Al-Mawird Pakistan. He is the author of the book, “Qanoon-e-Itmam-e-Hujjat awr Us kay Itlaqaat: Janab Javed Ahmad Ghamidi ki Tawzihaat par Aetrazaat awr Ishkalaat ka Jaiza”, published by Almawrid Lahore Pakistan. Dr Irfan Shehzad writes and speaks on religious, social and sociopolitical issues. His articles are published in different scholarly journals including Ishraq, Lahore, Pakistan, Al-Shariah Gujranwala Pakistan and on social media.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *