نکاح کےلیے عمر کی تحدید کا مسئلہ (مختصر)

نکاح کے لیے عمر کی تحدید کا مسئلہ (مختصر) پاکستان کے ملکی قانون میں نکاح کے لیے لڑکے کی کم سے کم عمر 18 سال اور لڑکی کےلیے 16 سال مقرر کی گئی ہے۔ ایک جدید بِل میں لڑکی کے لیے بھی کم سے کم عمر 18 سال کرنے کی سفارش کی گئی ہے، جس کی خلاف ورزی کرنے پرجرمانہ

مكمل تحریر پڑھیںََ

نکاح کے لیے عمر کی تحدید کا مسئلہ

: تمہید دنیا کے بیشتر مھذب ممالک میں لڑکا اور لڑکی دونوں کے نکاح کی عمر کم و بیش18 سال مقرر ہے۔ اسی تناظر میں بہت سے مسلم ممالک بشمول پاکستان میں بھی نکاح کے لیے عمر کی تحدید کی گئی ہے۔ پاکستان کے عائلی قانون میں نکاح کے لیے لڑکے کی کم سے کم عمر 18 سال اور لڑکی

مكمل تحریر پڑھیںََ

فقہ کی عدالت میں میں نابالغ بچی کے ساتھ ریپ کی سزا

محترم، ڈاکٹر مشتاق صاحب، اپنے مقالے،‘The Crime of Rape and the Hanafi Doctrine of Siyasa’، میں امام سرخسی کی کتاب، ‘المبسوط’ کے حوالے سے نابالغ بچی کے ریپ کی سزا کو بیان کرتے ہوئے لکھتے ہیں: “If a person coerces a minor girl for sex causes damage to her, hadd punishment will not be imposed on him because the act

مكمل تحریر پڑھیںََ

خدا کی رحمت اور عدل: ایک حقیقت کے دو نام

فطرت الہی اور فطرت انسان کی مشترکہ اساسات اور احساسات: فطرت الہی کو جاننے اور سمجھنے کا راستہ فطرت انسانی ہے۔ {فِطْرَتَ اللَّهِ الَّتِي فَطَرَ النَّاسَ عَلَيْهَا لَا تَبْدِيلَ لِخَلْقِ اللَّهِ ذَلِكَ الدِّينُ الْقَيِّمُ} [الروم: 30] “تم اللہ کی بنائی ہوئی فطرت کی پیروی کرو، جس پر اُس نے لوگوں کو پیدا کیاہے۔” اخلاقیات اور جمالیات کے باب میں انسانوں

مكمل تحریر پڑھیںََ

قرآن کے ایک اسلوب کی وضاحت

قرآن کے ایک اسلوب جو بہت سے لوگوں کے لیے غلط فہمی کا سبب بن جاتا ہے، اس کی وضاحت یہاں مقصود ہے۔ :درج ذیل آیات پر غور کیجیے مَن يَشَإِ اللَّـهُ يُضْلِلْـهُ وَمَن يَشَأْ يَجْعَلْهُ عَلَىٰ صِرَاطٍ مُّسْتَقِيمٍ (سورہ الروم، 30:21) اللہ جسے چاہتا ہے، گمراہ کرتا ہے اور جسے چاہتا ہے، سیدھی راہ پر لگا دیتا ہے۔ فَيَغْفِرُ

مكمل تحریر پڑھیںََ

دین میں معیارِ حق، شخص یا اصول

دین اسلام میں کسی شخص کی مطلق اطاعت اور اندھی تقلید کا تصور موجود نہیں ہے۔ کسی انسانی شخصیت کو مطلقاً معیارِ حق قرار نہیں دیا گیا۔ دین میں معیارِ حق، وحی اور اس کے طے کردہ اخلاقی اور شرعی اصول اور قوانین ہیں۔ چنانچہ دینی شخصیت خواہ کوئی بھی ہو، اس کے اقوال، افعال اور اعمال کو دین و

مكمل تحریر پڑھیںََ

کیا قرآن اپنے ثبوت کے لیے خبر واحد کا محتاج ہے؟

مولانا زاہد الراشدی صاحب کے ایک نقطہ نظر پر چند گزارشات مولانا زاہد الراشدی صاحب وہ شخصیت ہیں جن کو پڑھ کر دین جاننے اور مزید جاننے کا جذبہ پیدا ہوتا ہے۔ میں نے ان کی تحاریر سے بہت کچھ سیکھا۔ تاہم، ان کے ایک موقف سے کچھ اختلاف پیدا ہوا ہے۔ جو اہل علم و نطر کی خدمت میں

مكمل تحریر پڑھیںََ

قرآن مجید میں خدا کے وعدوں کو خدا کا حکم سمجھنے کی غلطی فہمی

اسلام کے سیاسی غلبے کو دینی فریضہ قرار دینے کے حق میں یہ استدلال ایک بنیادی استدلال کی حیثیت سے پیش کیا جاتا ہے کہ قرآن مجید میں اللہ تعالی نے صحابہ کرام سے فتح و نصرت کے وعدے کیے تھے جو ان کے حق میں پورے ہوئے۔ یہی وعدے دیگر اہل ایمان کے لیے بھی عام ہیں۔ مسلمان اگر

مكمل تحریر پڑھیںََ

عورت کو بیک وقت ایک سے زائد شوہروں کی اجازت کیوں نہیں؟

اگر یہ بدیہی حقیقت تسلیم کر لی جائے کہ نکاح سے خاندان کا ادارہ وجود میں لانے کی وجہ بچے کی نگہداشت اور پرورش ہے، پھر یہی انسان جب بڑھاپے کو پہنچتا ہے تو اسے پھر خاندان کے ادارے کی ضرورت ہے جو اب اس کی دیکھ بھال کرے۔ انسان کی پوری زندگی کی ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے

مكمل تحریر پڑھیںََ